کاروبار میں آگے بڑھنے کی کامیاب حکمت عملی

زندگی میں دو طرح کے لوگ ہیں ایک وہ جن کا پیدائش کے وقت ہی فیملی بیک گراؤنڈ مضبوط ہوتا ہے اور دوسرا وہ شخص جس کا فیملی بیک گراونڈ اول روز سے خستہ حالی کاشکار ہوتا ہے کسی شخص کی کامیابی کے لیے یقیناً اگر آپ کے والدین دنیاوی طور پر خوشحال ہیں تو یہ چیز آپ کے حق میں جاتی ہے اور یہ چیز آپ کو کالج سے فارغ ہونے کے بعد اچھی ملازمت کے حصول میں بھی مدد کرتی ہے حالانکہ کالج کی ڈگری اور اچھے سماجی تعلقات کامیابی کی گارنٹی نہیں ہیں بلکہ وہ آپ کے فیملی بیک گراؤنڈ کی وجہ سے صرف مشکلات سے تھوڑی سے کمی کرتے ہیں بہت سی مثالیں ہیں کہ بہت کم تعلیم یافتہ لوگوں نے اور بہت معمولی پس منظر کے حامل لوگوں نے ان روکاوٹوں کے باوجود کامیابی حاصل کی لوگوں نے غربت سے امارات کا سفر اپنے بل بوتے پر کیے اگرچہ انہوں نے زندگی میں کام یا کاروبار کافی دیر بعد شروع کیا اور بہت سی مشکلات کے ہوتے ہوئے کیا یہی وہ لوگ ہیں جنہوں نے ملک کی سب سے بڑی کمپنیاں قائم کیں جن کی مصنوعات ہم روزانہ کی بنیاد پراستعمال کرتے ہیں۔

کاروبار میں کامیاب ہونے کے لیے 50 سُنہری اصول۔

1۔ کوئی بھی نظام اس وقت تک مکمل نہیں ہوتا جب تک اس کو چلانے کے لیے مؤثر ہدایت نامہ نہ ہو۔
2۔ مرحلہ ہو یا درمیانہ یا آخری مرحلہ بہت مدد فراہم کرے گی لیکن یہ صحیح معنوں میں اسی وقت مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔
3۔ اپنی زندگی سنوارنے کی خواہش ماں کی گود سے لے کر قبر تک ہمارا پیچھا کرتی ہے۔
4۔ جوش و جذبہ کے بغیر کبھی کوئی عظیم کام ممکن نہیں ہوسکتا۔
5۔ جب آپ کا ایک مقصد ہو تو پھر اس کے لیے ضروری ہے کہ کامیابی حاصل کرنے کے لیے مستقل مزاجی ضروری ہے۔
6۔ مستقل مزاجی اور نظم و ضبط کامیابی کی عظیم کنجی ہے۔
7۔ اگر آپ زندگی کی دوڑ میں گر جائیں تو ارادہ کرلو کہ دوبارہ کھڑا ہونا ہے تو کھڑا ہونے کے لیے وہ جذبہ آپ کے تمام معاملات کو دوبارہ ٹریک پر لا سکتا ہے۔
8۔ جب تک آپ اپنے آپ کو کام میں اوسط آدمی سے زیادہ مصروف نہیں کریں گے اس وقت تک آپ ترقی نہیں پاسکتے اور اوپر نہیں پہنچ سکتے۔
9۔ آپ کاروبار میں اس وقت ترقی کروگے اگر آپ جانتے ہو کہ آپ کیا کر رہے ہیں محنت کرو اور کامیابی کا یقین رکھو۔
10۔ صرف صیح پیشہ میں ہونا کافی نہیں ہے بلکہ آپ کو صحیح فرم میں بھی ہونا چاہیے۔
11۔ جب ہم اپنے کام میں محنت کرتے ہیں جس کا گہرا اثر ہمارے آنے والے وقت پر پڑتا ہے تو اس وقت ہمارا کام ہماری پہچان بن جاتا ہے۔
12۔ وہ زندگی جس کا مشاہدہ نہ کیا جائے جینے کے قابل نہیں ہمیں خود تجزیاتی مشقوں سے گزرنا ہوگا جو خود کو جاننے میں مدد فراہم کرے گی۔
13۔ وہ شخص جو اس لیے کام نہیں کرتا کہ وہ کام سے پیار کرتا ہے بلکہ رقم کی خاطر کام کرتا ہے جب ایسا مزاج ہوتو پھر ایسا شخص نہ تو زیادہ رقم کما سکتا ہے اور نہ ہی زندگی میں ترقی کر سکتا ہے۔
14۔ کسی چیز کی حد سے زیادہ چاہت ہی اس کو حقیقت میں پانے کا پہلا قدم ہوتا ہے۔
15۔ آپ کسی کام میں زیادہ دیر تک دلجمی سے وقت نہیں لگا سکتے اگر آپ اس کام کو پسند نہ کرتے ہوں۔
16۔ ایک اچھا جوڑ تب ہی بنتا ہے جب آپ کی صلاحتیں اور ترجیحات آپ کے کام کے تقاضوں کے مطابق ہوں۔
17۔ آپ کو اپنے مقاصد کا تعین کرکے رکھنا چاہیئے ۔
18۔ جب تک لوگ کوئی ایسا کام نہ شروع کریں جسے وہ انجوائے کرسکیں وہ کبھی بھی کامیابی کی منزل نہیں پاسکتے۔
19۔ کسی بھی نئے کام کے شروع میں آپ کو رضاکارانہ طور پر کام کرنا ہوگا اور اپنے روزمرہ کے کاموں سے کچھ وقت نکال کر اس کام کو بھی وقت دینا ہوگا۔
20۔ چھوٹے کاروبار مخصوص مارکیٹوں پر دھیان دیتے ہیں تاکہ وہ وہاں سے اپنا حصہ لے سکیں۔
21۔ بڑے کاروبار عموماً مارکیٹ کے کافی بڑے حصہ پر کنٹرول رکھتے ہیں۔
22۔ سب سے اہم بات جس کا خیال رکھنا چاہیئے وہ یہ ہے کہ کسی بھی کاروبار کو بہت زیادہ نہیں پھیلانا چاہیئے جب تک اس کے ساتھ مناسب سہارے کے لیے سپورٹ سسٹم نہ ہو۔ایسے کاروبار ی ادارے میں دفتری قسم کی روکاوٹیں کاروبار کو نقصان پہنچا سکتی ہیں اور ایک کمپنی اس وقت بہت بڑی ہوجاتی ہے جب اس کی انتظامیہ اس کے کام سنبھال نہ سکے اور اس کے ملازمین کی ضروریات کا خیال نہ رکھ سکے اور نہ ہی صارفین اور شئیر ہولڈرز کے مفادات کا دھیان رکھ سکے۔
23۔ بہترین کمپنیاں اپنا ایک واضح مشن یا مقصد رکھتی ہیں جس سے ان کے کاروبار کی نوعیت بھی واضح رہتی ہے۔
24۔ اچھی کمپنیاں اپنی بیان کردہ اقدار اور اصل کاموں کے درمیان ایک ہم آہنگی رکھتی ہیں کیونکہ اس سے پورے کاروباری ادارے میں ایک مقصدیت اور مستقل مزاجی پیدا ہوتی ہے۔
25۔ کسی فرم میں تمام شعبوں کے درمیان ایک باہم رابطہ ہونا چاہیئے تاکہ مشترکہ مقصد کا حصول ممکن ہوسکے۔
26۔ کارکردگی کو بہتر سے بہتر بنانے کے لیے کم سے کم لیول آف اتھارٹی ہونی چاہیئے مثلا کسی بھی منیجر کے نیچے بارہ افراد سے زیادہ کا عملہ نہیں ہونا چاہیے۔
27۔ بہترین تنظیمی ڈھانچے وہ ہوتے ہیں کہ ان کو چلانے والی انتظامیہ بدل جانے سے ادارے کو کوئی فرق نہیں پڑتا اور اس کی کارکردگی ویسے ہی رہتی ہے۔
28۔ ادارے اپنے عملے کے بارے میں کیا سوچتے ہیں اس کا اظہار ان کے عملے کے رویے سے ہوتا ہے۔
29۔ بہترین کمپنیاں یہ سمجھتی ہیں کہ ان کی کامیابی مل جل کر ٹیم کی شکل میں کام کرنے کی وجہ سے ہے وہ اپنے ہر ملازم کو احساس دلاتے ہیں کہ وہ ٹیم کا حصہ ہے۔
30۔ اچھی کمپنیوں میں بہت کھلی اور غیر روایتی فضا ہوتی ہے۔
31۔ بہترین کمپنیاں اپنے عملے کو کام کے لیے اچھی فضا فراہم کرتی ہیں ان کی عمارتیں صاف ستھری،محفوظ اور خوب روشن ہوتی ہیں جس سے ذہنی دباو بھی کم ہوتا اور پیداوار میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔
32۔ بہترین کمپنیاں بہت اچھے طریقے سے کام سے تعارف کرواتی ہیں اور اچھی تربیت کرتی ہیں اور اپنے نئے عملہ کو کمپنی کے اصل مشن،مقصد سے بھی آگاہ رکھتی ہیں اور انہیں بتاتی ہیں کہ وہ کیسے اپنے ادارے کے لے سود مند ثابت ہوسکتے ہیں۔
33۔ اچھی کمپنیوں میں تمام ملازمیں کو ان کے نام سے بلایا جاتا ہے اور کوئی ایسے سخت اصول نہیں ہوتے جن کی وجہ سے لوگ احساس کمتری کا شکار ہو اور اپنی بے عزتی محسوس کریں۔
34۔ ایک ادارے کا مقصد یہ ہوتا ہے کہ ایک عام آدمی کو اس قابل بنایا جائے کہ وہ غیر معمولی کام کرسکے اور یہی کام بہترین کمپنیاں کرتی ہیں۔
35۔ ترقی یافتہ کمپنیاں اپنے ملازمین کو اتنی ہی ذمہ داری دیتی ہیں جتنی وہ نبھا سکیں تاکہ وہ یہ محسوس کریں کہ وہ اچھے ماحول میں کام کررہے ہیں۔
36۔ بہترین کمپنیوں کے ملازمین ہمیشہ اپنے کام سے خوش نظر آتے ہیں۔
37۔ اشیاء کی پیداوار میں سب سے اہم چیز ان کا معیار ہے اور اس کے بہت بعد لاگت کی اہمیت ہے۔
38۔ کسی بھی شخص کو دوسروں پر سب سے زیادہ فوقیت اسی وقت حاصل ہوتی ہے جب وہ ہر طرح کی صورت حال میں پرسکون رہے اور غصے میں نہ آئے۔
39۔ ملازمین کو اچھی تنخواہ دینے سے ملازمین اپنے کام سے بوریت محسوس نہیں کرتے اور وہ آپ کا کام اپنا سمجھ کر کرتے ہیں۔
40۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ وہ لوگ جو آپ کے ماتحت کام کرتے ہیں ان سے بہترین خدمات لی جائیں تو آپ کو ان سے ہمیشہ اچھا سلوک کرنا چاہیئے ۔
41۔ بطور ایک فرم کے منیجر کے آپ کو یہ کبھی نہیں بھولنا چاہیئے کہ آپ اپنے عملہ کی کارکردگی کے لیے حتمی طور پر ذمہ دار ہیں آپ اپنا اختیار تو دوسروں کو سونپ سکتے ہیں لیکن اپنی ذمہ داری نہیں سونپ سکتے۔
42۔ چاہے آپ تعریف کریں یہ تنقید کریں لیکن وہ درست وقت پر ہونی چاہیئے
43۔ اپنے ماتحتوں کے ساتھ معاملات طے کرتے ہوئے آپ کو ہمیشہ اپنے آپ
سے سوال پوچھنا چاہیئے ،اگر میں ان کی جگہ پر ہوتا تو کیا میں خود سے اسی طرح کا سلوک پسند کرتا؟
44۔ کوئی بھی نظام اس وقت تک مکمل نہیں ہوتا جب تک اس کو چلانے کے لے موثر ہدایت نامہ نہ ہو۔
45۔ اپنی کمپنی کا اچھا تاثر قائم کرنے کا ایک بہترین طریقہ یہ بھی ہے کہ آپ شہری اور خیراتی اداروں کے ساتھ اچھے تعلقات قائم کریں۔
46۔ کسی بھی نئے پراجیکٹ کی کامیابی کے امکان کو بڑھانے کے لیے آپ کو ایک ایسی فضاء بنانی چاہیئے کہ جو لوگوں کی حوصلہ افزاء کرے کہ وہ نئی چیزیں بنا سکیں اس کے لیے بہترین طریقہ یہ ہے کہ لوگوں کو اجازت دے دی جائے کہ وہ عام روٹین سے ہٹ کر کام کر سکیں تاکہ وہ اپنی کوششوں پر دھیان دیں۔
47۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کے ماتحت آپ کو معیاری کام کرکے دکھائیں تو آپ کو انہیں معیاری مصنوعات اور خدمات دینے کے عوض انعام دینا چاہیئے تاکہ ان کا حوصلہ بڑھے اور کام کو مزید دل جمی سے کریں۔
48۔ ہمیشہ اپنی کامیابیوں کو اپنے ساتھیوں کے ساتھ شئیر کریں جنہوں نے اس کامیابی میں آپ کا ہاتھ بٹایا ہے۔
49۔ ایک اہم کام جوکہ آپ اپنے ادارے میں غیر رسمی معلومات کے تبادلے کی حوصلہ افزائی کے لیے کرسکتے ہیں وہ یہ ہے کہ آپ اپنا دروازہ کھلا رکھیں۔
50۔ منیجر کا پہلا کام یہ ہوتا ہے کہ وہ یہ واضح طور پر سمجھے کہ کاروبار کی نوعیت کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں