کلاوڈ برسٹ بادلوں کا پھٹنا کس چیز کو کہتے ہیں۔؟

اس سال مون سون میں ویسے تو پورے ملک میں کافی بارشیں ہورہی ہیں مگر گزشتہ دنوں اسلام میں بار شوں نے ریکارڈ قائم کردیا ہے وفاقی دارلحکومت میں ہونے والی 330ملی میٹر تک ریکارڈ ہوئی یہاں تک کہ اسلام آباد کا راول ڈیم پانی سے بھر گیا اور خطرے سے بچنے کے لیے راول ڈیم کے اسپل وے کھولنے پڑے یہی نہیں راولپنڈی سے گزرنے والا لئی نالہ تاریخ میں پہلی بار پانی کی بلند سطح کے ساتھ 40ہزار کیوسک پانی کا ریلا اس سے گزرنے لگا 40ہزار کیوسک کا ریلا کوئی معمولی ریلا نہیں ہوتا عام طور پر جب دریا خشک پڑ جاتے ہیں تو ایک صوبے سے دوسرے صوبے میں پانی کی منتقلی کے وقت اکثر و بیشتر 40ہزار کیوسک پانی ہی چھوڑا جاتا ہے جو برق رفتاری کے ساتھ دریا سے گزرتا ہے ڈی جی میٹ نے اسلام آباد میں ہونے والی بارشی تباہی کے متعلق ایک جملہ بول ہے کہ ہم نے وفاقی حکومت کو پہلے ہی کلاوڈ برسٹ نہیں ہوا البتہ بارشیں شدید ہوگئی تو ڈی جی میٹ کے اس جملے کے بعد لوگ جاننا چاہتے ہیں کہ کلاوڈ برسٹ کیا ہے تو آئیے آج ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ کلاوڈ برسٹ کس کو کہتے ہیں۔
محکمہ موسمیات کے ڈی میٹ کی جانب سے جاری اس بیان کے مطابق کلاوڈ برسٹ دراصل اسے کورین گش اور رین گسٹ بھی کہتے ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہوتا کہ اگر کسی چھوٹے علاقے میں یعنی صرف کسی ایک شہر میں مختصر سے وقفے میں شدید بارش ہوجائے تو اسے کلاوڈ برسٹ کہتے ہیں۔ اس کے لیے ضروری ہے کہ مخصوص علاقے میں مختصر سے وقت میں کم سے کم 200ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہو جبکہ اسلام آباد کے کسی بھی علاقے میں بارش تو شدید ہوئی ہے مگر کسی ایک علاقے میں 121ملی میٹر سے زیادہ بارش ریکارڈ نہیں ہوئی۔ کلاوڈ برسٹ میں بارش کے ساتھ تیز بجلی اور بادلوں کی تیز گرج چمک بھی شامل ہوتی ہے۔اسی لیے اسلام آباد کی بارش بلاشبہ تاریخی بارش ہے مگر یہ کلاوڈ برسٹ کے زمرے میں نہیں آتی۔ انسائیکلو پیڈیا بریٹانیکا کے مطابق کلاوڈ برسٹ کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ بادلوں کے نیچے سے ہوا اوپر اٹھتی ہے اور پانی کے قطروں کو کچھ دیر کے لیے روکے رکھتی ہے مگر جیسے ہوا کا دباو کم ہوتا ہے وہ رکا ہوا پانی بڑی مقدار میں نیچے گرتا ہے تب تیز بجلی کی چمک بادلوں کی تیز گرج کے ساتھ ایسے بارش ہوتی ہے جیسے اچانک پانی کی بالٹی الٹ دی جائے یہاں یہ بات ذہن نشین رہے کہ کلاوڈ برسٹ کے زیادہ تر واقعات پہاڑی علاقوں میں رونما ہوتے ہیں اسی لیے پہاڑی علاقوں میں جب بارشیں ہوتی ہیں تو سیلاب کی شکل اختیار کرجاتی ہیں اور اس سیلابی کیفیت میں ان علاقوں میں آبادیوں سمیت فصلوں کو نقصان پہنچتا ہے۔ یاد رہے کلاوڈ برسٹ تب ہوتا ہے جب کسی ایک مخصوص علاقے میں ایک گھنٹے میں 200ملی میٹر تک بارش ریکارڈ کی گئی ہو اسلام آباد کی بارش ویسے تو 330ملی میٹر تک ریکارڈ ہوئی ہے مگر یہ پورے اسلام کا فگر ہے صرف ایک علاقے کا نہیں اور اگلی بات یہ چوبیس گھنٹو ں کا ریکارڈ ہے ایک گھنٹے کا نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں